53

بلوچستان، غریب صوبے کے امیر ارکان اسمبلی دبئی میں جائیدادوں کے مالک

الیکشن کمیشن نے بلوچستان اسمبلی ممبران کے اثاثوں کی تفصیلات جاری کردیں۔

ممبر بلوچستان اسمبلی جان محمد جمالی ایک کروڑ بیس لاکھ روپے اور چالیس ایکڑ زرعی زمین کے مالک ہیں، ان کے پاس 60 تولے سونا اور 25 لاکھ روپے مالیت کی گاڑی ہے، جبکہ ایک کروڑ 74 لاکھ 27 ہزار روپے سے زائد رقم نقد اور چار لاکھ 26 ہزار روپے سے زائد رقم بنک میں موجود ہے۔

سردار یار محمد رند 14 ہزار ایکڑ زرعی زمین کے مالک ہیں، ان کی ڈیرہ مراد جمالی میں رہاشی پلاٹ کی قیمت 30 لاکھ روپے، کوئٹہ میں گھر دو کروڑ روپے اور اسلام آباد میں ساڑھے تین کروڑ کا گھر ہے، ان کے میرینا دبئی میں دو اپارٹمنٹ کی قیمت تین کروڑ ساٹھ لاکھ روپے جبکہ دبئی میں ولاز کی قیمت چار کروڑ بیس لاکھ روپے ہے، ان کے پاس 646 تولے سونا اور دو کروڑ 88 لاکھ روپے کی چار گاڑیاں بھی ہیں، ان کے پاس 12 لاکھ کیش ،63 لاکھ درہم، 85 لاکھ روپے کا فرنیچر ہے۔ سردار یار محمد کے پاس پچیس کروڑ روپےسے زائد زرعی اجناس اور بیس لاکھ روپےکا ذاتی اسلحہ ہے۔ممبر بلوچستان اسمبلی نواب اسلم رئیسانی 21 ارب روپے سے زائد کے اثاثے رکھنے والے امیر پارلیمنٹرین بن گئے۔ ان کی زرعی زمین 19  کروڑ ، رہائشی پلاٹ ایک ارب 79 کروڑ 67 لاکھ روپے سے زائد ہے۔ وہ تین ارب 75 کروڑ روپےسے زائد گاڑیوں کے مالک ہیں۔ ان کے اکاوئنٹ میں 51 کروڑ 38 لاکھ روپے سے زائد رقم ہے جبکہ 23 کروڑ روپے کے جانور بھی ہیں۔ ان کی یورپی ملک مالٹا میں ایک ارب 73 کروڑ اٹھاون لاکھ روپے سے زائد جائیداد ہے۔