22

بحیرہ احمر میں جہاز حوثیوں کی باردوی سرنگ سے ٹکرا گیا، سعودی عرب

ریاض: سعودی اتحادی افواج نے دعویٰ کیا ہے کہ بحیرہ احمر میں مال بردار بحری جہاز حوثی باغیوں کی جانب سے زیر آب بچھائی گئی بارودی سرنگ سے ٹکرا گیا۔

سعودی عرب کے سرکاری ٹیلی وژن کے مطابق بحیرہ احمر میں ساز و سامان سے لدا مال بردار بحری جہاز حوثی باغیوں کی سمندر میں بچھائی گئی ایک باردوی سرنگ سے ٹکرا گیا۔

دہشت گردی کی اس واقعے کی اطلاع یمن میں حوثی باغیوں سے نبردآزما سعودی عرب کی قیادت قائم اتحادی افواج کے ترجمان نے دی تاہم دہشت گردی کے اس واقعے سے متعلق تفصیلات فراہم نہیں کی گئیں۔عالمی خبر رساں ادارے سے گفتگو میں خطے میں سمندری تجارتی امور پر نگاہ رکھنے والی برطانوی میرین ٹریڈ آپریشنز نے ایسے کسی بھی واقعے سے لاعلمی کا اظہار کیا ہے۔

اسی طرح مشرق وسطیٰ کے پانیوں پر امریکی یا سعودی جہازوں اور تنصیبات کے تحفظ کے لیے پٹرولنگ کرنے والے امریکی بحری جہاز کے عملے نے بھی اس واقعے کی تصدیق یا تردید سے انکار کردیا ہے۔

یاد رہے کہ رواں ہفتے سعودی قیادت میں عرب عسکری اتحاد کی جانب سے بحیرہ احمر میں 171 باردوی سرنگیں تباہ کرنے کا دعویٰ کیا گیا تھا اور ان بارودی سرنگوں کا ذمہ دار حوثی باغیوں کو ٹھہرایا گیا تھا۔